Thread Rating:
  • 107 Vote(s) - 2.82 Average
  • 1
  • 2
  • 3
  • 4
  • 5
خانیوال : گھاس کاٹنے کی سزا, خاتون پنچایت کے حکم پر سنگسار
#1
خانیوال میں جاگیردار کی فصل سے گھاس کاٹنے پر خاتون کو پنچایت کے حکم پر اینٹیں مار مار کر قتل کر دیا گیانواحی گاؤں چک نمبر8 /15 آر کچا کھوہ میں 25 سالہ پانچ بچوں کی ماں مریم بی بی علاقے کے جاگیردار راجہ محبوب کی فصل سے گھاس کاٹ رہی تھی کہ جاگیردار نے اسے گھاس کاٹنے سے منع کیا اور ناجائز تعلقات قائم کرنے کا کہا اور زبردستی اس سے زیادتی کی کوشش کی تومریم بی بی نے اسے برا بھلا کہا جس کا بدلہ لینے جاگیردار اپنے ساتھیوں کے ہمراہ اْنکے گھرزبردستی گھس گیا۔ مریم بی بی اور اْسکی ساس زینب کو شدید زدوکوب کیا جسکی درخواست پولیس چوکی عاقل کو دی گئی۔ پولیس نے مقامی جاگیردار کے اثرورسوخ پر کوئی کارروائی نہ کی اور جاگیردار نے اپنے ڈیرے پر اپنی برادری کی پنچائیت بلائی جس میں فیصلہ کیا گیا کہ اس خاتون کو ہمارے خلاف تھانے میں درخواست دینے کی سزا دی جائے کہ ایک چھوٹی ذات کی غریب خاتون نے ہمارے خلاف تھانے میں کیسے درخواست دی اس کو مار دیا جائے۔ جب مریم بی بی کی ساس کو پنچائیت کے فیصلے کا پتہ چلا تو اس نے فوراً اپنی بہو کی جان بچانے کے لئے ایڈیشنل سیشن جج خانیوال کو درخواست گزاری کہ پولیس کو حکم دیا جائے کہ ہمیں جان ومال کا تحفظ دیا جائے۔ عدالت نے پولیس سے 26 جولائی کو تمام واقعہ کی رپورٹ طلب کر لی تھی کہ پنچائیت کے فیصلے پر راجہ محبوب اپنے دیگر آٹھ ساتھیوں کے ہمراہ اْنکے گھر گھس گیا اور مریم بی بی کو گھر سے باہر نکال کر سر میں اینٹیں مار مار کر قتل کر دیا اور اْسکے خاوند کو اغواء کر کے لے گئے۔ پولیس نے نعش قبضہ میں لے کر پوسٹ مارٹم کے لئے کچا کھوہ ہسپتال منتقل کر دی۔ اگر پولیس اس وڈیرے کے خلاف بروقت کارروائی کر لیتی تو غریب عورت کو اپنی جان سے ہاتھ نہ دھونے پڑتے۔ مقتولہ کے پانچ معصوم بچے چیف جسٹس آف پاکستان، صدر آصف علی زرداری اور وزیراعلیٰ پنجاب سے انصاف مانگ رہے ہیں۔

خانیوال : گھاس کاٹنے کی سزا, خاتون پنچایت کے حکم پر سنگسار
خانیوال(قدرت نیوز) خانیوال میں جاگیردار کی فصل سے گھاس کاٹنے پر خاتون کو پنچایت کے حکم پر اینٹیں مار مار کر قتل کر دیا گیانواحی گاؤں چک نمبر8 /15 آر کچا کھوہ میں 25 سالہ پانچ بچوں کی ماں مریم بی بی علاقے کے جاگیردار راجہ محبوب کی فصل سے گھاس کاٹ رہی تھی کہ جاگیردار نے اسے گھاس کاٹنے سے منع کیا اور ناجائز تعلقات قائم کرنے کا کہا اور زبردستی اس سے زیادتی کی کوشش کی تومریم بی بی نے اسے برا بھلا کہا جس کا بدلہ لینے جاگیردار اپنے ساتھیوں کے ہمراہ اْنکے گھرزبردستی گھس گیا۔ مریم بی بی اور اْسکی ساس زینب کو شدید زدوکوب کیا جسکی درخواست پولیس چوکی عاقل کو دی گئی۔ پولیس نے مقامی جاگیردار کے اثرورسوخ پر کوئی کارروائی نہ کی اور جاگیردار نے اپنے ڈیرے پر اپنی برادری کی پنچائیت بلائی جس میں فیصلہ کیا گیا کہ اس خاتون کو ہمارے خلاف تھانے میں درخواست دینے کی سزا دی جائے کہ ایک چھوٹی ذات کی غریب خاتون نے ہمارے خلاف تھانے میں کیسے درخواست دی اس کو مار دیا جائے۔ جب مریم بی بی کی ساس کو پنچائیت کے فیصلے کا پتہ چلا تو اس نے فوراً اپنی بہو کی جان بچانے کے لئے ایڈیشنل سیشن جج خانیوال کو درخواست گزاری کہ پولیس کو حکم دیا جائے کہ ہمیں جان ومال کا تحفظ دیا جائے۔ عدالت نے پولیس سے 26 جولائی کو تمام واقعہ کی رپورٹ طلب کر لی تھی کہ پنچائیت کے فیصلے پر راجہ محبوب اپنے دیگر آٹھ ساتھیوں کے ہمراہ اْنکے گھر گھس گیا اور مریم بی بی کو گھر سے باہر نکال کر سر میں اینٹیں مار مار کر قتل کر دیا اور اْسکے خاوند کو اغواء کر کے لے گئے۔ پولیس نے نعش قبضہ میں لے کر پوسٹ مارٹم کے لئے کچا کھوہ ہسپتال منتقل کر دی۔ اگر پولیس اس وڈیرے کے خلاف بروقت کارروائی کر لیتی تو غریب عورت کو اپنی جان سے ہاتھ نہ دھونے پڑتے۔ مقتولہ کے پانچ معصوم بچے چیف جسٹس آف پاکستان، صدر آصف علی زرداری اور وزیراعلیٰ پنجاب سے انصاف مانگ رہے ہیں۔
Reply
#2
very sad!
Reply


Possibly Related Threads...
Thread Author Replies Views Last Post
  خانیوال میں پنجابی طالبان کا داخلہ robot 1 2,901 17-08-2012, 04:24 AM
Last Post: adnan1980

Forum Jump:


Users browsing this thread: 1 Guest(s)